Healthصحت اور زندگی

شدید تھکاوٹ سے مردوں میں دل کے دورہ کے خطرات بڑھ جاتے ہیں

اسلام آباد : شدید تھکاوٹ سے مردوں میں دل کے دورہ کے خطرات بڑھ جاتے ہیں۔روس کے انسٹیٹوٹ آف سائٹولوجی اینڈ جینیٹکس کی تحقیق کے مطابق ہارٹ اٹیک (دل کا دورہ) اکثر جان لیواثابت ہوتا ہے اور اگر جان بچ بھی جائے تو اس کے بعد بہت زیادہ احتیاط کی ضرورت ہوتی ہے کیونکہ دوسرے اٹیک کا خطرہ ہمیشہ موجود رہتا ہے۔واضح رہے کہ ہارٹ اٹیک اچانک کسی شخص کا شکار کرتا ہے اور اس کے نتیجہ میں اکثرموت بھی واقع ہوسکتی ہے۔

تحقیق کے مطابق شدید تھکاوٹ کا شکار مردوں میں ہارٹ اٹیک کے خطرات بہت زیادہ ہوتے ہیں۔مائیلو کارڈیل انفارکشن ( دل میں خون کی فراہمی میں رکاوٹ پیدا ہونا) تھکاوٹ کا سبب بنتا ہے اور غیر شادی شدہ، طلاق یافتہ اور رنڈوے ہوجانے والے مردوں میں اس کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔ تحقیق میں کہا گیا ہے کہ شدید تھکاوٹ، بے دلی اور بڑھتا ہوا چڑچڑا پن اس کی نمایاں علامات میں شامل ہیں۔

محققین نے کہا ہے کہ عام طور پر سمجھا جاتا ہے کہ زیادہ تر افراد یہ سمجھتے ہیں کہ زندگی کے بڑھتے مسائل کی وجہ سے ایسا ہوتا ہے۔دوران تحقیق شدید ترین تھکاوٹ اور مائیلو کارڈیل انفارکشن کا تعلق ایسے مردوں میں بھی پایا گیا جن کوماضی میں دل کی کسی قسم کی کوئی تاریخ نہیں تھی۔

واضح رہے کہ تحقیق میں 25 سے 64 سال کی عمر کے 657 مردوں کے اعداوشمار کا جائزہ لیا گیااوران کی 14 سال تک مسلسل مانیٹرنگ کی گئی۔نتائج کے مطابق ان میں سے 67 فیصدیعنی دوتہائی مردوں کو تھکاوٹ کا سامنا تھا جن میں سے 52 فیصد میں اس کی سطح نارمل جبکہ 15 فیصد میں بہت زیادہ تھی۔

محققین نے کہاکہ تھکاوٹ کا سامنا کرنے والے 74 فیصد مردوں کو ہائی بلڈ پریشر کا مرض لاحق تھا۔مزید برآں تحقیق میں شدید تھکاوٹ اور ہارٹ اٹیک کے خطرہ میں تعلق کی بھی نشاندہی کی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ تھکاوٹ کے شکار افراد میں 10 سال میں ہارٹ اٹیک کا خطرہ 2.25 گنا جبکہ 14 سال کے دوران 2.1 گناتک بڑھ جاتا ہے۔

اسی طرح تحقیق میں سماجی عناصر جیسا کہ عمر، تعلیم، پیشہ اور ازدواجی حیثیت کو شامل کیا گیا تو تھکاوٹ اور ہارٹ اٹیک کے خطرہ میں نمایاں تعلق بھی پایا گیا۔تحقیق کے مطابق غیر شادی شدہ ، طلاق یافتہ اور رنڈوے افراد میں یہ خطرہ بالترتیب 3.7، 4.7 اور 7 گنا تک زیادہ ہوتا ہے۔محققین نے کہا ہے کہ تنہا رہنے کے نتیجہ میں سماجی تعاون کم ہوتا ہے جو امراض قلب اور فالج کے خطرات بڑھانے والے عناصر میں شامل ہے۔

Severe Fatigue Increases The Risk Of Heart Attack In Men

ISLAMABAD : Extreme fatigue increases the risk of heart attack in men. Even if it survives, great care is needed after that because there is always a risk of another attack. It should be noted that a heart attack suddenly affects a person and as a result most of the deaths can occur.

Research has shown that men who suffer from severe fatigue have a higher risk of heart attack. Myelocardial infarction (obstruction of blood supply to the heart) causes fatigue and in unmarried, divorced and runaway men. The risk is higher. Research has shown that severe fatigue, lethargy and increasing irritability are some of the prominent symptoms.

Researchers say that most people believe that this is due to increasing problems in life. There was no history of any kind.

The study looked at the statistics of 657 men between the ages of 25 and 64 and monitored them continuously for 14 years. Its level was normal while 15% was very high.

The researchers said that 74% of men who suffered from fatigue had high blood pressure. The risk of heart attack increases 2.25 times in a year and 2.1 times in 14 years.

The study also found that social factors such as age, education, occupation and marital status were significantly linked to the risk of fatigue and heart attack. 3.7, 4.7 and 7 times more. Researchers say that being alone results in less social support, which is one of the factors that increase the risk of heart disease and stroke.

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button