Homeopathic

ایسڈ فاس کی مردوں اور عورتوں کے تولیدی اعضاء کی علامات

مردانہ تناسل اعضاء

رات کے دوران نیز پاخانہ کرتے وقت منی کا اخراج ہو، منی کی نالیوں کی سوزش ، ضعف باہ ہو ، فوطوں میں نرمی ونزاکت ہو، خصیوں کی سوجن، ہم آغوش ہونے کے باوجودنعوظ نہ ہو، پاخانہ خواہ کتناہی نرم ہواسے خارج کرتے وقت پراسٹیٹ گلینڈ، پراسٹیٹ گلینڈ سے رطوبت کا اخراج ہو، فوطوں کی تھیلی کا ایگزیما، غلفہ کا اذیما اور حشفہ کی سوجن، اعضائے پوشیدہ کا دادسائیکوسس کے اثر سے پھوڑے پھنسیاں۔

 زنانہ تناسلی اعضاء

ماہواری وقت سے بہت پہلے اور بکثرت ہو۔ اس کے ساتھ درد جگر، کھجلی ، ماہواری کے بعد لیکوریا ہو جس کی رطوبت ک ارنگ زردہو۔ پستانوں میں دودھ کی کمی۔ بچے کو دودھ پلانے کے باعث پیدا شدہ خرابی صحت کے لئےاس دواکا استعمال بہت نافع ہے۔ رحم کا زخم، کثیر مقدارمیں گندے خون کا اخراج جس میں پیپ بھی شامل ہو ساتھ ہی متعلقہ حصہ میں درداوع کھجلی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button